Posted in pencil

۔۔لفظ، معنی ،مفہوم 

آج کے اس تیز رفتار دور میں بظاہر انسان ترقی تو بہت کر گیا ہے مگر انسانیت تو جیسے ختم ہوتی جا رہی ہے احترام،حیا، گفتگو کے آداب علمی بحثیں سب گزشتہ عہد کی باتیں رہ گئی ہیں ۔عام آدمی بس عام ہی ہو گیا ہے ہر چیز سے آزاد۔۔۔۔ نہ اخلاق، نہ علم، نہ دین عام آدمی کو اسکی ضرورت نہیں رہی ۔اسکی زندگی تو شاید کمانے کھانے اور دکھانے میں ہی گزر جاتی ہے۔کتابیں علمی باتیں ادب ثقافت تو بڑے لوگوں کی باتیں ہیں ۔یہی وجہ ہے کہ اس قدر ترقی اور بے بہا علم کے عام آدمی ان سب سے بے نیاز اپنی دنیا میں مگن ہے ۔اسکی اپنی ہی سوچ ہے اسکی لغت الگ ہے،کیا لفظ اور کیا انکے معنی اور کیا مفہوم ۔۔سب کچھ الگ ہے ۔ سو ایسے میں تقدس سے توہین کا سفر پل میں طے ہو جاتا ہے ۔کسی بھی لفظ کو کوئی بھی معنی و مفہوم دیے جاسکتے ہیں۔جو شاید کہنے والے کے وہم و گمان میں بھی نہ ہوں ۔ شیکسپیئر نے درست ہی کہا ہے کہ ‘For there is nothing either good or bad, but thinking makes it so.’

عبیداللہ علیم کے بقول’استعآرہ پھول میں خوشبو کہ سمجھانے کا نام ‘مگر عام آدمی استعارہ کو ہی خوشبو سمجھنے پر زور دیتا ہے ایسے لوگوں کو کون سمجھائے ۔اور ان کو سمجھانا گویا جوئے شیر لانے ہے۔

Advertisements

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s