Posted in ڈائری

ایک عزیز کے نام خط

جب ہم لوگ اس دنیا سے گزر جائیں گے تو  ہماری ذمہ داریاں تم پر اور تم سے بھی چھوٹی عمر کے عزیزوں کےکندھوں پر ڈالی جائیں گی اور دنیا کی افتاد اور رفتار کو دیکھتے ہوئے میں اندازہ کرتا ہوں کہ تم لوگوں کی ذمہ داریاں ہماری ذمہ داریوں سے کہیں بڑھ کر ہوں گی ۔اگر تم ان ذمہ داریوں کو پورے طور پر ادا کرو گے تو ہماری روحیں بھی خوش ہوں گی اور آنے والی نسلیں بھی تمہیں مبارک گردانیں گی۔ اور تمھارا نام روشن ہوگا اور زندہ رہیگا اور سب سے بڑھ کر یہ کہ تم خود خدا تعالٰی کے حضور مقبول ہوگے اور رحمت میں داخل کئیے جاؤ گے ۔

سر ظفر اللہ خان 

کتاب ایک عزیز کے نام خط، 16 مئ 1939

Posted in pencil

دل

دل میرا محبوب کا تخت 

محبوب وہ جو دل کی منزل 

توڑ دے جو دل دوسرے کا

وہ کہاں دیکھ سکے گا رستہ گھر کا

نہ اس جہاں نہ اس جہاں 
Poet younis Emre

Translated in urdu by pencil from English version by Jennifer Ferrari Latif Bolat