Posted in pencil

ادھوری بات 

 ادھوری بات

میں نے چاہا کہ

  محسوس جو کیا

وہ کہہ دوں

سوچتی ہی رہی

بات مگر بن نہ سکی

لفظ  سب تمام ہوے

بات رہ گئی ادھوری 

دل کے جو احساس تھے

لفظوں میں وہ ڈھل نہ سکے

Advertisements

جواب دیں

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s